May 20, 2024

Warning: sprintf(): Too few arguments in /www/wwwroot/nancycouick.com/wp-content/themes/chromenews/lib/breadcrumb-trail/inc/breadcrumbs.php on line 253
27172737ebb44d6

لاہور میں ہونے والی انسانی حقوق کی کانفرنس میں فلسطین کے حامی نوجوانوں نے جرمن سفیر کی تقریر کے دوران شدید احتجاج کرتے ہوئے غزہ کے عوام کی حمایت میں نعرے لگائے۔

میڈیا رپورٹس کے مطابق لاہور میں گورنمنٹ کالج یونیورسٹی آزاد کشمیر کے طالب علم علی حسن نے مقبوضہ فلسطین کے علاقے غزہ کے معاملے پر پاکستان میں تعینات جرمن سفیر کے خطاب کے دوران احتجاج کیا۔

طالب علم علی حسن کانفرنس کے دوران جرمنی میں فلسطین کے حق کے لیے احتجاج میں گرفتاریوں کے خلاف سوال کیا۔ طالب علم کا کہنا تھا کہ پاکستان میں یہ سفیر انسانی حقوق پر تقاریر کرتے ہیں اور اپنے ممالک میں انسانی حقوق کی پامالی کرتے ہیں۔

لاہور کے مقامی ہوٹل میں پانچویں عاصمہ جہانگیر کانفرنس کا آغاز ہو گیا جس میں غیر ملکی سفارتکاروں سمیت معروف شخصیات شریک ہیں۔ وفاقی وزیر قانون اعظم نذیر تارڑ، سپریم کورٹ کے سینئر جج جسٹس منصور علی شاہ نے بھی تقریب میں شرکت کی۔

پاکستان میں جرمنی کے سفیر الفریڈ گراناس کے تقریر شروع کرتے ہی شرکا میں سے چند نوجوانوں نے اٹھ کر اونچی آواز میں مکالمہ شروع کر دیا۔ طالب علموں کی جانب سے غزہ اور فلسطین کے حق میں نعرے بھی لگائے گئے۔

نوجوانوں نے فری فری فلسطین کے نعرے لگائے۔ اونچی آواز میں بولنے پر جرمنی کے سفیر خود پر قابو نہ رکھ سکے اور نوجوانوں کو ڈانٹ دیا۔ کانفرنس کے منتظمین نے فلسطین کے حق میں بات کرنے والے نوجوانوں کو انسانی حقوق کانفرنس سے نکال دیا۔

سابق صدر سپریم کورٹ بار احسن بھون نے عاصمہ جہانگیر کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ دنیا کی بڑی یونیورسٹیوں میں اس ہفتے فلسطین کے حق میں احتجاج پر لوگوں کو گرفتار کیا گیا ہے، عاصمہ جہانگیر آمریت کے خلاف کھڑی ہوتی رہیں۔

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *